121

دلیپ کمار کی تاریخ.

لیجنڈ اداکار دلیپ کمار یوسف خان کے نام سے 11 دسمبر 1922 کو پشاور برطانوی ہندوستان میں پیدا ہوئے۔

انہوں نے اپنے فلمی کیریئر کا آغاز 1944 کی فلم جگنو سے کیا۔ کچھ اور فلموں کے بعد انہیں 1949 میں میلو ڈرامہ انداز کے ساتھ بڑا بریک ملا۔ اس فلم نے دلیپ کمار کو ہندی سنیما کے سرفہرست ستاروں میں سے ایک کے طور پر مضبوطی سے قائم کیا۔

اپنے طویل اور شاندار کیریئر میں، دلیپ کمار نے 60 سے زیادہ فلموں میں کام کیا، جن میں مغل اعظم (1960)، گنگا جمنا (1961) اور رام اور شیام (1967) جیسی کلاسک فلمیں شامل ہیں۔ انہوں نے کئی باوقار ایوارڈز جیتے، جن میں مغل اعظم اور امر پریم (1972) کے لیے فلم فیئر بہترین اداکار کا ایوارڈ بھی شامل ہے۔ دلیپ کمار کو 1991 میں بھارت کے تیسرے سب سے بڑے شہری اعزاز پدم بھوشن سے نوازا گیا۔

1998 میں دلیپ کمار اداکاری سے ریٹائر ہوئے اور ممبئی چلے گئے۔ وہاں انہوں نے پرسکون زندگی گزاری یہاں تک کہ ان کی اہلیہ سائرہ بانو نے ممبئی ہائی کورٹ میں درخواست دائر کی کہ انہیں ہندوستانی شہری قرار دیا جائے۔ 2005 میں دلیپ کمار کو بالآخر ہندوستانی شہریت دی گئی۔ وہ فی الحال اپنی بیوی اور بیٹی کے ساتھ ممبئی میں مقیم ہیں۔

اپنی ریٹائرمنٹ کے بعد بھی، دلیپ کمار ہندوستانی سنیما کی سب سے قابل احترام اور پیاری شخصیات میں سے ایک ہیں۔ 2010 میں، انہیں دادا صاحب پھالکے ایوارڈ سے نوازا گیا، جو سنیما میں ہندوستان کا سب سے بڑا اعزاز ہے۔ ایوارڈ کی تقریب میں، دلیپ کمار نے کہا کہ وہ خود کو “دنیا کا خوش قسمت ترین آدمی” سمجھتے ہیں جنہوں نے چھ دہائیوں سے زیادہ عرصے تک ہندوستانی سنیما میں کام کیا۔

دلیپ کمار ایک زندہ لیجنڈ ہیں اور تمام خواہشمند اداکاروں اور اداکاراؤں کے لیے ایک تحریک ہیں۔ وہ واقعی ہندوستان کے سب سے بڑے اداکاروں میں سے ایک ہیں۔

دلیپ کمار 11 دسمبر 1922 کو پشاور، برطانوی ہندوستان میں پیدا ہوئے۔ انہوں نے اپنے فلمی کیریئر کا آغاز 1944 کی فلم جگنو سے کیا، اور کچھ اور فلموں کے بعد، انہیں 1949 میں میلو ڈرامہ انداز کے ساتھ اپنا بڑا وقفہ ملا۔ اس فلم نے دلیپ کمار کو ہندی سنیما کے سرفہرست ستاروں میں سے ایک کے طور پر مضبوطی سے قائم کیا۔

اپنے طویل اور شاندار کیریئر میں، دلیپ کمار نے 60 سے زیادہ فلموں میں کام کیا، جن میں مغل اعظم (1960)، گنگا جمنا (1961) اور رام اور شیام (1967) جیسی کلاسک فلمیں شامل ہیں۔ انہوں نے کئی باوقار ایوارڈز جیتے، جن میں مغل اعظم اور امر پریم (1972) کے لیے فلم فیئر بہترین اداکار کا ایوارڈ بھی شامل ہے۔

1998 میں دلیپ کمار اداکاری سے ریٹائر ہوئے اور ممبئی چلے گئے۔ وہاں انہوں نے پرسکون زندگی گزاری یہاں تک کہ ان کی اہلیہ سائرہ بانو نے ممبئی ہائی کورٹ میں درخواست دائر کی کہ انہیں ہندوستانی شہری قرار دیا جائے۔ 2005 میں دلیپ کمار کو بالآخر ہندوستانی شہریت دی گئی۔ وہ فی الحال اپنی بیوی اور بیٹی کے ساتھ ممبئی میں مقیم ہیں۔

دلیپ کمار ایک زندہ لیجنڈ ہیں اور تمام خواہشمند اداکاروں اور اداکاراؤں کے لیے ایک تحریک ہیں۔ وہ واقعی ہندوستان کے سب سے بڑے اداکاروں میں سے ایک ہیں۔


دلیپ کمار 11 دسمبر 1922 کو پشاور، برطانوی ہندوستان میں پیدا ہوئے۔

انہوں نے اپنے فلمی کیریئر کا آغاز 1944 کی فلم جگنو سے کیا، اور کچھ اور فلموں کے بعد، انہیں 1949 میں میلو ڈرامہ انداز کے ساتھ اپنا بڑا وقفہ ملا۔ اس فلم نے دلیپ کمار کو ہندی سنیما کے سرفہرست ستاروں میں سے ایک کے طور پر مضبوطی سے قائم کیا۔

اپنے طویل اور شاندار کیریئر میں، دلیپ کمار نے 60 سے زیادہ فلموں میں کام کیا، جن میں مغل اعظم (1960)، گنگا جمنا (1961) اور رام اور شیام (1967) جیسی کلاسک فلمیں شامل ہیں۔ انہوں نے کئی باوقار ایوارڈز جیتے، جن میں مغل اعظم اور امر پریم (1972) کے لیے فلم فیئر بہترین اداکار کا ایوارڈ بھی شامل ہے۔

1998 میں اپنی ریٹائرمنٹ کے بعد دلیپ کمار ممبئی میں پرسکون زندگی گزارتے رہے یہاں تک کہ ان کی اہلیہ سائرہ بانو نے ممبئی ہائی کورٹ میں درخواست دائر کی کہ انہیں ہندوستانی شہری قرار دیا جائے۔ 2005 میں، دلیپ کمار کو بالآخر ہندوستانی شہریت دی گئی اور وہ اس وقت اپنی بیوی اور بیٹی کے ساتھ ممبئی میں مقیم ہیں۔

دلیپ کمار ایک زندہ لیجنڈ ہیں اور تمام خواہشمند اداکاروں اور اداکاراؤں کے لیے ایک تحریک ہیں۔ وہ واقعی ہندوستان کے سب سے بڑے اداکاروں میں سے ایک ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں